+92 307 4151718 vuassassins@gmail.com

Lab pe aati hai dua ban ke tamanna meri
Zindagi shamma ki surat ho Khudaya meri
Door dunya ka mere dam se andhera ho jaye
Har jagha mere chamakne se ujala ho jaye



Ho mere dam se yunhi mere watan ki zeenat
Jis tarha phool se hoti hai chaman ki zeenat
Zindagi ho meri parwane ki surat ya Rabb
Ilm ki shamma se ho mujh ko mohabbat ya Rabb
Ho mera kaam gharibon ki himayat karna
Dardmando se za’eefon se mohabbat karna
Mere Allah burai se bachana mujhko
Naik jo rah ho, ussi reh pe chalana mujhko

14 Comments

  1. 𝓕𝓪𝔀𝓪𝓭

    زمانہ آیا ہے بے حجابی کا عام دیدار یار ہوگا
    سکوت تھا پردہ دار جس کا وہ راز اب آشکار ہوگا

    گزر گیا اب وہ دور ساقی کہ چھپ کے پیتے تھے پینے والے
    بنے گا سارا جہان مے خانہ ہر کوئی بادہ خوار ہوگا

    کبھی جو آوارۂ جنوں تھے وہ بستیوں میں آ بسیں گے
    برہنہ پائی وہی رہے گی مگر نیا خار زار ہوگا

    سنا دیا گوش منتظر کو حجاز کی خامشی نے آخر
    جو عہد صحرائیوں سے باندھا گیا تھا پر استوار ہوگا

    نکل کے صحرا سے جس نے روما کی سلطنت کو الٹ دیا تھا
    سنا ہے یہ قدسیوں سے میں نے وہ شیر پھر ہوشیار ہوگا

    کیا مرا تذکرہ جو ساقی نے بادہ خواروں کی انجمن میں
    تو پیر مے خانہ سن کے کہنے لگا کہ منہ پھٹ ہے خار ہوگا

    دیار مغرب کے رہنے والو خدا کی بستی دکاں نہیں ہے
    کھرا ہے جسے تم سمجھ رہے ہو وہ اب زر کم عیار ہوگا

    تمہاری تہذیب اپنے خنجر سے آپ ہی خودکشی کرے گی
    جو شاخ نازک پہ آشیانہ بنے گا ناپائیدار ہوگا

    سفینۂ برگ گل بنا لے گا قافلہ مور ناتواں کا
    ہزار موجوں کی ہو کشاکش مگر یہ دریا سے پار ہوگا

    چمن میں لالہ دکھاتا پھرتا ہے داغ اپنا کلی کلی کو
    یہ جانتا ہے کہ اس دکھاوے سے دل جلوں میں شمار ہوگا

    جو ایک تھا اے نگاہ تو نے ہزار کر کے ہمیں دکھایا
    یہی اگر کیفیت ہے تیری تو پھر کسے اعتبار ہوگا

    کہا جو قمری سے میں نے اک دن یہاں کے آزاد پاگل ہیں
    تو غنچے کہنے لگے ہمارے چمن کا یہ رازدار ہوگا

    خدا کے عاشق تو ہیں ہزاروں بنوں میں پھرتے ہیں مارے مارے
    میں اس کا بندہ بنوں گا جس کو خدا کے بندوں سے پیار ہوگا

    یہ رسم برہم فنا ہے اے دل گناہ ہے جنبش نظر بھی
    رہے گی کیا آبرو ہماری جو تو یہاں بے قرار ہوگا

    میں ظلمت شب میں لے کے نکلوں گا اپنے درماندہ کارواں کو
    شہہ نشاں ہوگی آہ میری نفس مرا شعلہ بار ہوگا

    نہیں ہے غیر از نمود کچھ بھی جو مدعا تیری زندگی کا
    تو اک نفس میں جہاں سے مٹنا تجھے مثال شرار ہوگا

    نہ پوچھ اقبال کا ٹھکانہ ابھی وہی کیفیت ہے اس کی
    کہیں سر راہ گزار بیٹھا ستم کش انتظار ہوگا

  2. 𝓕𝓪𝔀𝓪𝓭

    Golden Words

    Gunah se hr waqt bacho magar Tanhai me Gunah se khas tor par bacho Q k uss Gunah ka Gawah khud Allah Pak ho ga.

  3. 𝓕𝓪𝔀𝓪𝓭

    KabHi Kisi kO apNi saFai pesh nA karO.. Q k jO aaP saY pyAr karTa Hai uS kO zarOrt naHi.. Or jO naFrat karTa Hai wO kbHi yaQeen naHi karE ga….

  4. 𝓕𝓪𝔀𝓪𝓭

    Duniya Main “ghussa” Wo Munfarid “haram” Cheez Hai Jise Peena “halal” Hai
    1- Duniya Main “GHUSSA” Wo Munfarid “HARAM” Cheez Hai Jise Peena “HALAL” Hai. 2- Lafzon K Daant Nahi Hote, Lekin Ye Kaat Lete Hen Aur Agar Ye Kaat Len Tu Phir In K Zakham Zindagi Bhar Nahi Bharte. 3- Baat Tameez Se Aur aitraaz Daleel Se Karo Q K Zuban Tu Hewano K Munh Mein Bhi Hoti Hai. Magar Wo Ilm Aur Saleeqe Se Mahroom Hote Hen. 4- Fitrat, Soch Aur Halaat Mein Tasadum Hai “Warna” Insaan Kesa Bhi Ho Dil Ka Bura Nahi Hota.

  5. 𝓕𝓪𝔀𝓪𝓭

    “Lambi Umeedoun se perhaiz kia karo, Kyun k woh Tumhare Paas Mojood Naimatoun ko tumhari nazar main Haqeer Bna deti hain.

  6. migena

    the life we know we have is nothing compared to the life we want to live.

Submit a Comment